Breaking News
Home / Awareness / PSL

PSL

کھیل جسم کی صحت مندی کو برقرار رکھنے کے ساتھ ساتھ ہمارے لیے معاشی، سماجی اور معاشرتی طور پر بھی نہایت فائدہ مند ثابت ہوتے ہیں۔
پاکستان سپر لیگ سیزن 4 کا زور شور سے آوازہ بلند ہو رہا ہے ہر پاکستانی چاہے اسکو کھیلوں کا شوق نہیں بھی ہے لیکن وہ کافی حد تک اس سے متاثر ہورہا ہے اور شوق رکھنے والے حضرات کا جذبہ تو قابل دید ہے۔
ملک پاکستان کئی گھمبیر مسائل سے نبرد آزما ہونے کے ساتھ ساتھ جو لوگ پاکستان کی مثبت ساکھ کو ترقی دینے کی انفرادی و اجتماعی کاوشیں کررہیں ہیں ان کو دل کی اتھا گہرائیوں سے عقیدت بھرا سلام پیش کیا جاتا ہے۔ اور یقینا پاکستان سپر لیگ بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے اس پر مزید بات سے پہلے آئیے پہلے ذرا اسکا مختصر سا جائزہ لیتے ہیں۔
پاکستان سپر لیگ ایک ٹوینٹی ٹوینٹی فارمیٹ کی کرکٹ لیگ ہے جو پاکستان کرکٹ بورڈ کی نگرانی میں چل رہی ہے۔ اس کا آغاز 9 ستمبر 2015 کو لاہور میں 5 ٹیموں کے ساتھ ہوا۔ ہر صوبے کی نمائندگی پر مشتمل ٹیم بمع دارلحکومت کی علیدہ ٹیم کے آغاز سے ہی پاکستان کی ساری عوام کو ایک مثبت پیغام پہنچا دیا گیا۔

دسمبر 2015 میں لیگ کے ابتدائی کمرشل رائٹس دس سال کی مدت کے لیے 93 میلین ڈالر کے عوض فروخت ہوئے جن کی مارکیٹ ویلیو 2017 میں 300 میلین ڈالر ہوچکی تھی۔ لیگ کا پہلا میچ 2016 میں کھیلا گیا جس میں فتح کا سہرا اسلام آباد یونائٹیڈ کے سر سجا۔ ابھی تک کی سب زیادہ فتح یاب ٹیم بھی دارلحکومت کی ہی ٹیم رہی ہے۔ 2016 میں پہلے سیزن کے اختتام پر چئیر مین پی سی بی نجم سیٹھی صاحب نے بتایا کہ ہمیں پہلے سیزن میں کسی خاص قسم کے منافع کی توقع نہ تھی لیکن اسکے باوجود لیگ نے پہلے سیزن میں ہی 2.6 میلین ڈالر کا منافع حاصل کرکے ایک اچھی روایت قائم کی۔
لیگ کے انویسٹرز میں سب سے نمایاں نام حبیب بنک لیمیٹڈ کا ہے جبکہ اسکے علاوہ پاکستان کے معروف کاروباری ادارے موبی لنک نیٹ ورک، ہائیر، اے آر وائی گروپ اور بین الاقوامی سطح پر لیونائن گلوبل اور قطر لبریکنٹس شامل ہے۔
لیگ کی ٹائٹل سپانسر شپ شروع سے اب تک حبیب بنک لمیٹڈ کے پاس ہے جو پہلے حبیب بنک نے 2016 سے 2018 تک 5 میلین ڈالر کے عوض خریدی اور پھر اسے مزید 3 سال کے لیے 14.3 میلین ڈالر کے عوض رینیو کروا لیا اس سے آپ صرف 3 سال کے عرصے میں ٹائٹل سپانسر شپ حاصل کرنے کے لیے رقم کا واضح طور پر اضافہ دیکھ سکتے ہیں جو لیگ کی معاشی بہتری کا منہ بولتا ثبوت ہے۔
دنیا میں اپنے مثبت پیغام کے لیے لیگ نے بھاری رقم کے عوض بین الاقوامی کھلاڑیوں کو ٹیمز میں شامل کیا ہے۔
اس وقت ہر ٹیم کی اپنی علیحدہ ویب سائٹ سمیت ویرفائڈ سوشل میڈیا اکاؤنٹس موجود ہیں جو واضح طور پر لیگ کی بہترین انتظامی پالیسی کی طرف اشارہ کرتا ہے۔
ابھی 2019 کے سیزن 4 کا آغاز ہوا چاہتا ہے جو 14 فروری سے لے کر 17 مارچ تک 34 میچز کے ساتھ کھیلا جائے گا ملتان سلطان سمیت جو کہ پچھلے سیزن میں شامل ہوئی تھی اس میں 6 ٹیمز اپنی قسمت آزمائی کریں گی۔
سیزن 4 کی ابتدائی تقریب دبئی انٹرنیشنل سٹیڈیم میں صوفی بینڈ کے ساتھ ہوگی جس میں پاکستان کے مشہور و معروف موسیقار آئمہ بیگ اور شجاع حیدر اپنی آواز کے جادو سے لوگوں کو دلوں کو گرمائیں گے۔ اور اس لیگ کا فائنل 17 مارچ 2019 کو نیشنل سٹیڈیم کراچی میں کھیلا جائے گا۔ 
یہ پاکستان سپر لیگ کا ایک نہایت مختصر سا جائزہ تھا باقی اس میں جو اہم باتیں ہیں اور ایک ذمہ دار شہری ہونے کی حیثیت سے ہمارا فرض بھی ہے وہ یہ کہ حد درجہ کوشش کریں کہ کسی بھی صورت میں خود سمیت کسی کو بھی ایسی بات کرنے مت دیں جس سے علاقائی تعصب بھڑکتا ہو اگر آپ لاہور کے شہری ہیں تو ضروری نہیں کہ صرف لاہور قلندر کو سپورٹ کرنا ہے اور دوسری ٹیموں کو تضحیک کا نشانہ بنانا ہے بلکہ آپ کسی بھی شہر کی ٹیم کو پاکستانی ہونے کے ناطے سپورٹ کرسکتے ہیں اس سے آپ محبت و امن کا پیغام پھیلانے میں پاکستان میں جاری مثبت کوششوں میں اپنا حصہ ڈال سکتے ہیں۔ 
اس سارے ایونٹ کے دوران عوام الناس کے جوش و خروش اور آپسی محبت پر مشتمل تصاویر اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹس پر شئیر کریں تاکہ ہمارا سوفٹ امیج مزید واضح ہوسکے۔ 
اس جیسے ایونٹس عوام الناس کے چہروں پر خوشیاں بکھیرنے، معاشی ترقی، سماجی رواداری، محبت پھیلانے اور امن کا پیغام عام کرنے کے لیے منعقد کیے جاتے ہیں لہذا آپ سب حد درجہ کوشش کریں کہ جذبہ حب الوطنی کے تحت ان میں جتنا اپنا حصہ ڈال سکیں تو یہ ہمارے اپنے اور ہمارے ملک کے لیے بہترین ثابت ہوگا۔

Check Also

destiny

قسمت آزمائی

اکثر لوگ مواقعوں کی تلاش میں اپنی زندگیاں صرف کردیتے ہیں اور وہ اس انتظار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے