Breaking News
Home / Awareness / Love

Love

دنیا میں موجود ہر قسم کا فساد، تعصبات، مصائب، جنگ و جدل، قتل و قتال غرض ہر قسم کی برائی کا براہ راست یا بلا واسطہ تعلق "نفرت” جیسی غلیظ چیز سے ہے اور دنیا میں موجود ہر قسم کا سکون، اطمینان، اتحاد و یگانگت، امن و سلامتی غرض ہر قسم کی اچھائی کا تعلق براہ راست "محبت” کے احساس کی مرہونِ منت ہے اور احساس کا درجہ صرف محبت کو ہی دیا جاسکتا ہے جس کی بدولت ہم نے زندگی پائی، ہم جی رہے ہیں اور مستقبل میں جی سکیں گے جبکہ نفرت تو ایک غلیظ چیز کا نام ہے.
آج کا دن خاص طور پر محبت کے لیے منایا جاتا ہے اور لوگ اس دن اپنی محبت کا کھل کر مختلف طریقوں سے اظہار کرتے ہیں، وعدے وفا کرنے کا عہد کرتے ہیں، کئی نئی قسم کی امیدیں وابستہ کرتے ہیں، اپنے دل کے رشتے کو مظبوط بنانے کے لیے ایک دوسرے کو تحفے تحائف پیش کرتے ہیں.
جیسا کہ میں نے پہلے عرض کیا کہ محبت ایک بہترین احساس ہے تو بدولت ان کارگزارئیوں کے ہر جگہ فرحت بھرا خوش نما و دلکش احساس پیدا ہوتا ہے.
گوکہ بعضوں نے اس دن کی مناسبت سے اپنی کچھ خاص رائے قائم کی ہوئی ہے اور وہ اسی کی وجہ سے باقی تمام پہلوؤں کو نظر انداز کرتے ہوئے اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہیں۔
لیکن عرض یہی ہے کہ محبت کسی ویلینٹائن کی محتاج نہ ہے اور نہ کبھی ہوسکتی ہے کیونکہ محبت تو کائنات کے آغاز سے ہے اور ضروری نہیں کہ آپ اس دن اپنی کسی محبوبہ سے ہی محبت کا اظہار کریں یا سرخ ڈریس پہن کر اس دن کو منائیں بلکہ آپ دنیا میں موجود غموں و پریشانیوں میں مبتلا انسانوں کے مسائل کے حل کے لیے اس دن کو وقف کرکے ان سے اپنی محبت کا اظہار کرسکتے ہیں.
آپکے والدین کو کھانے میں جو چیز پسند ہے وہ انہیں کھلا کر یا کسی ایسے طریقے سے جس سے وہ خوش ہوتے ہیں ان سے اپنی محبت کا اظہار کرسکتے ہیں
اپنی چھوٹی بہنا یا بھائی کو کوئی خاص تحفہ دے کر ان سے اپنی محبت کا اظہار کرسکتے ہیں.
آپکی شریکِ حیات جو محبت کی سب سے زیادہ مستحق ہے آپ اپنا یہ سارا دن، سارا ہفتہ بلکہ پورا مہینہ خاص ان کے لیے وقف فرما سکتے ہیں یہی تو ایک رشتہ ہے جہاں نفرت کی تنکہ برابر بھی گنجائش نہیں ہونی چاہیے کیونکہ خونی رشتے بمع والدین تو آپکی پیدائش کے دن سے ہی بندھ جاتے ہیں ان کو چاہ کر بھی نہیں توڑا جا سکتا لیکن یہ واحد رشتہ ہے جس کی ابتداء محبت ہے، انتہا محبت ہے، بنیاد محبت ہے.
ایک مکمل جان جو کسی دوسرے گھر میں پیدا ہوتی ہے، وہیں اپنے بابُل کے آنگن میں پلتی بڑھتی ہے، موجودہ حالات کے مطابق اپنے آپ کو ڈھالتی ہے پھر وہ اپنا گھر بار چھوڑ کر اپنا آپ صرف آپ کے لیے وقف کردیتی ہے یہاں تک اس کے نام کے ساتھ اس کو پیدا کرنے والے کا نام ہٹا کر آپ کا نام لگادیا جاتا ہے تو آپ یقین کریں نہ صرف اس ایک دن کی محبت کی بلکہ وہ اس سے کئی گنا زیادہ محبت جس کی کوئی حد نہ ہو اس کی حقدار ہے جس طرح اس نے اپنی زندگی آپ کے لیے وقف کی ہے آپ بھی اپنی ساری زندگی اُسی کے نام کرنے گزارنے کا عہد کریں، اُنکو اپنی بانہوں میں جکڑ کر اپنے جذبات کا اظہار کریں کہ اس ناقابلِ بیاں منظر کی مختصراً نقشہ کشی کچھ یوں بن جائے

” ہم آپکو اور آپ ہمیں اپنا مجازی خدا قرار دیں

فقط اسی ضد میں ہم اپنی ساری زندگی گزار دیں”

اس لیے برائے مہربانی اس دن کو صرف ایک پہلو سے دیکھتے ہوئے یک طرفہ رائے کا اظہار قطعاً مت کریں۔
اپنے لمحات کو قیمتی جانتے ہوئے محبت پھیلانے اور حاصل کرنے کی خاطر ایک موقع بھی ہاتھ سے مت جانے دیں. 
آج انسانیت کو محبت کی شدت سے ضرورت ہے مفاد پرستی و خود غرضی کی آڑ میں نفرتیں وجود میں لائی جاتی ہیں ہمیں مل کر نفرت کو شکست دینی ہے محبت کو غالب کرنا ہے ہمیں ایک لڑکے کے کسی دوسری لڑکی کو پھول پیش کرنے پر اعتراض کرنے کی بجائے آج بھی سکول نہ جا سکنے والے بچوں کے معاملے یا آج بھی خط غربت سے نیچے زندگی گزارنے والے انسانوں کے مسائل کے معاملے میں اپنے تحفظات کا اظہار کرنا چاہیے یہ انسانیت کو درپیش مسائل کو حل کرنے کا زیادہ معتبر اور عمدہ طریقہ کار ہے.

Check Also

destiny

قسمت آزمائی

اکثر لوگ مواقعوں کی تلاش میں اپنی زندگیاں صرف کردیتے ہیں اور وہ اس انتظار …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے